آ گیا ماہِ صیام


06-05-2019 | مولانا محمد ثانی حسنی

آ گیا ماہِ صیام

 

لے کے رحمت کا پیام

روح پرور روز و شب

 

برکتوں کے صبح و شام

اک بہارِ جاں فزا

 

آ گئی مستِ خرام

ہر قدم نور و سرور

 

ہر نفس صدقے مشام

رحمتیں ہی رحمتیں

 

مغفرت کا اذنِ عام

وا ہوئے جنت کے در

 

آتشِ دوزخ حرام

شر ذلیل و خوار ہے

 

ہیں شیاطیں زیرِ دام

دل میں مستی جذب و شوق

 

لب پہ پاکیزہ کلام

دن کو روزہ کا عمل

 

رات کو ذکر و قیام

سحری و افطار کا

 

انتظام و اہتمام

روزہ داروں کا یہی

 

مشغلہ ہے صبح و شام

اک سراپا خیر شب

 

ہے شبِ قدر اس کا نام

لیلۃِ عفو و کرم

 

فجر تک امن و سلام

مژدۂ رحمت لئے

 

برکتوں کے لے کے جام

صف بصف روح و ملک

 

ہوتے ہیں نازل تمام

طالبِ خیر و کرم

 

اٹھ کے لے کاس الکرام

کر لے اپنی آج تو 

 

مغفرت کا انتظام

​  

لے کے رحمت کی بہار

آ گیا ماہِ صیام




پچھلا صفحہ | اگلا صفحہ



شاعر کا مزید کلام
آ گیا ماہِ صیام
مسلماں ہم ہیں گلہائے گلستانِ محمدؐ ہیں